حرب العلمی


برآمدے میں تسنیم چیمہ وارد اور  ننھے ڈاکٹر ندارد۔ کیسی یہ دھشت اور کیسا یہ ڈر کہ ننھے

لمحہ بھر میں  د ربد ر۔ ۔جو  موقع فرار نہ پائے، اس کی کیفیت مثلِِ بز کہ کاٹو تو بدن میں لہو نہ

قلب میں ہل چل ۔ اس افراتفری میں پپو کو اپنی فکر، پپو مفرور ہو توسکھہ کا سانس، مفرور نہ

ہو توڈرا سہما سا سلام ،برآمدہ ویران اور پپو پریشان۔

پپو کی کالج آمد اور طرح طرح کے مصا ئب و آلام ۔ پپو اگر ہاسٹل میں مقیم تو حالت مزید سقیم ۔

کتنے خواب تھے جو ادھورے کتنی تمنا ئیں جوبرلب بھی نہ آئیں۔ کالج آنے سے پہلے پپو آئینے

کے سامنے لرزہ برآندام، اپنے اوپر ہیرو کا گمان ، خوش فہمیوں کا طوفان، اور خوابوں کا

سیلان۔کالج آتے ہی پپو ویران ، سارے خواب گمنام اور اس کی خواہشوں کا قتلِ عام ۔

پپو کو کیا خبر کہ اس کے ان مسور کن خیالات اور خوش کن خوابوں کی وادیوں سے دور

علم الطّب کا ایک بہت بڑا لشکر اس کے جسدِ خفیفی پرحملے کیلئے تیار ہے ، ایسا عظیم الشّان

لشکر جس کی مثال نہ ہو ، جس کی طاقت کو زوال نہ ہو، جس سے ٹکرانے کا کسی کو خیال نہ ہو۔

اس لشکرِ طب کی جنگی حکمتِ عملی بھی بےمثل۔ نئے آنے والوں پر یہ تین اطراف سے حملہ

آور ہو۔ ہ تین مورچے اناٹومی ، فزیالوجی اور با ئیوکیمسٹری۔ ان تین اطراف سے وہ گولیوں کی

بو چھاڑ ، وہ گولا بارود کی یلغار کہ اللہ رے اللہ۔ ننھاپپو جیسے یہ سب جھیلے وہ خود جانے یا

اس کااللہ جانے۔ کوئی مانے نہ مانے ،پپو اب باہر سے ہی پپو ہے ، اندر کا پپو اس شدید گولا

باری سے مر چکا ہے ۔

علم کی اس مہا دیوی سے اٹکھیلیاں کرنے کا پپو کا خواب پورا ہوا۔ اب یہ جسم تو ہے اس میں

جان نہیں ، روح تو ہے روح کا سامان نہیں ۔ اس مرگِ دروں کے اتمام میں محض دو ہی سال

درکار تھے، باقی سالوں کا تذکرہ عبث ہے۔ ریاضِ مسلسل اور مراقبہِ لم یذل سے شا ید کہ اندر کا

پپو دوبارہ جاگے ، تسلسل شرط ہے۔

Advertisements

2 thoughts on “حرب العلمی

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s